بھٹو کی پھانسی میں ان کے وکلا کی نااہلی بھی شامل تھی، سابق ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر

سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو کیس کے وعدہ معاف گواہ مسعود محمود کا بیان ریکارڈ کرانےکا حکم دینے والے سابق ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر خواجہ ظہیر نےکیس کے حوالے سے اہم دعویٰ کیا ہے۔

جیو نیوز کے نمائندے اعزاز سید سے گفتگو کرتے ہوئے سابق ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر خواجہ ظہیر کا کہنا ہےکہ  ذوالفقار علی بھٹو کے خلاف کیس میں وعدہ معاف گواہ کے پہلے اعترافی بیان میں بھٹو پر قتل کا کوئی الزام نہیں تھا۔

ان کا کہنا ہےکہ گواہ کے دو بیانات لیےگئے مگر بھٹو کے وکلا نے اس قانونی سقم کا فائدہ نہ اٹھایا۔

 خواجہ ظہیر کا کہنا تھا کہ بھٹو کے قتل کی ذمہ داری اس وقت کی حکومت پر عائد ہوتی ہے مگر اس میں بھٹو کے وکلا کی نااہلی بھی شامل ہے

About Geo News

Geo News

Check Also

سفارتخانے کی ہدایت کے باوجود بیشتر فرانسیسی شہریوں کا پاکستان چھوڑنے سے انکار

فرانسیسی سفارتخانے نے اپنے شہریوں اور پاکستان میں کام کرنے والی کمپنیوں کو ہدایت کی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے