کسی شخص کو محض مقدمے میں نامزد ہونے پر گرفتار نہیں کیا جاسکتا، سپریم کورٹ

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے تحریری حکم نامے میں کہا ہے کہ کسی کو محض نامزد ہونے پر گرفتار نہیں کیا جاسکتا، گرفتاری سے قبل ٹھوس وجوہات ضروری ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ نے گرفتاری کے حوالے سے تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ، جسٹس منصورعلی شاہ نے تفصیلی فیصلہ تحریرکیا۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ کسی کومحض مقدمےمیں نامزدہونےپرگرفتارنہیں کیا جاسکتا، کسی شخص کی گرفتاری سے قبل ٹھوس وجوہات ہوناضروری ہیں۔

تفصیلی فیصلے میں کہا ہے کہ پولیس کو قابل تعزیرجرم پرکسی شخص کوگرفتارکرنےکااختیارہے، پولیس کے پاس کسی شخص کی گرفتاری پر معقول وضاحت ہونی چاہیے۔

فیصلے کے مطابق پولیس کوہرشخص کی گرفتاری کاصوابدیدی اختیارنہیں، پولیس گرفتاری کا اختیار رکھنے پر ہر نامزد ملزم کو گرفتارنہیں کرسکتی۔

تفصیلی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ عدالتیں گرفتاری سےقبل ضمانت درخواست پرفیصلےکیلئےشفاف ٹرائل مدنظر رکھیں، گرفتاری سےقبل ضمانت کاعدالتی اختیارپولیس پرچیک کی حیثیت رکھتاہے، پولیس کی بدنیتی، بے قصور ہونے پر نامزد شخص قبل ازگرفتاری ضمانت کا حقدار ہے۔

Comments

About Ary News

Avatar

Check Also

عوام تبدیلی کے لئے گھروں سے نکل رہی ہے، عثمان ڈار

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما عثمان ڈار نے کہا ہے کہ ڈسکہ ترقیاتی کاموں میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے