کورونا متاثرہ خاتون کو پہلی بار زندہ انسان کا پھیپھڑا لگا دیا گیا –

ٹوکیو : دنیا میں پہلی بار جاپان میں کورونا متاثرہ خاتون کے پھیپھڑے کی پیوند کاری کے بعد وائرس زدہ مریضوں کو امید کی کرن مل گئی۔

اس حوالے سے کیوتو یونیورسٹی اسپتال جے عہدیدار کا کہنا ہے کہ اس نے کورونا وائرس کے باعث شدید نقصان پہنچنے والے پھیپھڑے کے علاج کیلئے بقید حیات عطیہ دہندگان سے حاصل کردہ پھیپھڑا دنیا میں پہلی بار متاثرہ خاتون کو لگا دیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق تھوراسک سرجری شعبے کے ڈائریکٹر پروفیسر داتے ہیروشی نے جمعرات کے روز عملے کے دیگر ارکان کے ساتھ ایک اخباری کانفرنس منعقد کی۔

مذکورہ اسپتال نے کہا ہے کہ کانسائی علاقے میں رہائش پذیر ایک خاتون بدھ کے روز تقریباً 11 گھنٹے سرجری کے عمل سے گزری ہیں۔

اس اسپتال کے مطابق یہ بیمار خاتون گزشتہ سال کے اواخر میں کورونا وائرس سے متاثر ہونے کے بعد شدید نمونیا میں مبتلا ہوگئی تھیں۔ ان کا علاج ای سی ایم او مشینوں کے ذریعے کیا گیا جو دل اور پھیپھڑوں کی جگہ لے لیتی ہیں اور بالآخر اس خاتون کا کورونا وائرس ٹیسٹ منفی آیا۔

لیکن مریضہ حد سے زیادہ ریشہ دار بافتیں بن جانے کی وجہ سے اپنے پھیپھڑے کے بیشتر افعال سے محروم ہوگئی تھیں اور بحالی کا کوئی امکان بھی نہیں تھا۔

سرجنوں نے مذکورہ خاتون کے شوہر اور بیٹے کی جانب سے عطیے کی پیشکش کے بعد پھیپھڑے کے حصے نکال کر خاتون کو لگائے۔

اسپتال نے بتایا ہے کہ مذکورہ خاتون کا اس وقت انتہائی نگہداشت کے کمرے میں علاج معالجہ کیا جا رہا ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اگر ان کی طبیعت مسلسل بحال ہوتی رہی تو زیادہ امکان یہ ہے کہ وہ تین ماہ میں دوبارہ مکمل صحت یاب ہو جائیں گی۔ ان کے مطابق خاتون کے شوہر اور بیٹے کی حالت بھی ٹھیک ٹھاک ہے۔

مذکورہ ہسپتال کا کہنا ہے کہ یہ خاتون دنیا میں کووڈ 19 کی پہلی ایسی سابق بیمار خاتون ہیں جنہیں بقید حیات عطیہ دہندگان سے حاصل کردہ پھیپھڑا سرجری کر کے لگایا گیا ہے۔

پروفیسر داتے نے کہا ہے کہ کورونا وائرس سے متاثر ہو جانے کے بعد شدید ضمنی اثرات کا شکار ہونے والے لوگوں کو دوسروں سے حاصل کردہ پھیپھڑے کی پیوند کاری امید افزا طریقہ علاج ہو گا۔

Comments

About Ary News

Avatar

Check Also

6 درخواستیں – ایکسپریس اردو

www.facebook.com/javed.chaudhry اتاترک جدید ترکی کے بانی ہیں‘ ان کا شمار دنیا کے دس بڑے لیڈروں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے