11 سال بعد قتل کیس کا فیصلہ؛ ڈکیتی کے مجرم کو پھانسی کی سزا

19 جولائی 2010 کو دوران ڈکیتی مجرم کی فائرنگ سے دکاندار اعجاز جاں بحق ہوگیا تھا ۔ فوٹو : فائل

 کراچی:  11 سال بعد قتل کیس کا فیصلہ ہوگیا، ماڈل ٹرائل کورٹ ایسٹ نے دوران ڈکیتی  قتل کرنے اور زخمی کرنے سے متعلق کیس میں مرکزی مجرم سمیر کو پھانسی کی سزا سنا دی۔

کراچی سٹی کورٹ میں ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج حلیم احمد نے دوران ڈکیتی  قتل کرنے اور زخمی کرنے کے کیس میں مرکزی مجرم سمیر کو پھانسی کی سزا سنادی۔

عدالت نے مجرم پر 10 لاکھ جرمانہ بھی عائد کیا، مجرم سمیر کو ڈکیتی کے جرم میں 10 سال قید اور 50 ہزار جرمانہ بھی سے عائد کیا،  مدعی کو زخمی کرنے پر 7 سال اور 50 ہزار جرمانہ  بھی عائد کیا گیا جب کہ عدالت نے کیس میں شریک ملزم کو عدم شواہد کی بناء پر بری کردیا۔

مجرم نے 19 جولائی 2010 کو بلال کالونی میں کباڑ کے دکان پر ڈکیتی کی تھی، دوران ڈکیتی مجرم کی فائرنگ سے دکاندار اعجاز جاں بحق ہوگیا تھا جب کہ ڈکیتوں کو پکڑنے کی کوشش میں مدعی سجاد زخمی ہوگیا تھا، مجرم کیخلاف قتل، اقدام قتل اور ڈکیتی کے دفعات کے تحت تھانہ کے آئی اے میں مقدمہ درج ہے۔

About Express News

Avatar

Check Also

پاکستان میں مزید  4993 افراد میں کورونا کی تشخیص

پاکستان میں آج  مزید 4993 افراد میں مہلک وائرس کی تشخیص ہوئی جس کے بعد …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے